پہلا صفحہ | کتاب خانہ | مقالے | نقد شبہات | سوال و جواب | نظريات | علماء | ھدايت يافتہ | مناظرات | گیلری |

|

مسافر کی نماز یں قصر کیوں ہیں ؟


سفر میں بعض نمازوں کے قصر ہونے کی وجہ درحقیقت یہ ہے کہ پہلے نمازیں دورکعتی تھیں٬ پیغمبر اکرم (ص) نے تقاضائے مصلحت کی بناء پر ان میں دورکعت اضافہ کردی چونکہ مسافر سفر میں آرام وسکون سے عبادت نہیں کرپاتا ہے لہذا اضافی رکعتوں کو کم کردیا گیا ـ
ممکن ہے کہ اس کے علاوہ اور بھی وجوہات ہوں جس سے ہم بے خبر ہیں 1 آپ کو علم ہوگا کہ احکام شرعی جتنے بھی ہیں یہ سب کے سب مصالح و مفاسد کے پیروہیں اور شارع مقدس نے ہر حکم (واجب و حرام) میں کوئی نہ کوئی ضرور مصلحت پوشیدہ کررکھی ہے کہ ممکن ہے کہ کسی کو بیان کیا ہو یا کسی کو نہیں ـ اگر کسی کو بیان کردیا ہے تو وہ مصلحت یا مفسدہ حکم کی علت قرار پائے گا ـ جب ہمیں کسی حکم کی علت معلوم ہوجائے تو ہم اسی کے ذریعہ جو اس سے مشا بہ موارد ہیں ایک حکم عام اخذ کریں گےـ جیسا کہ شراب کے سلسلے میں فرمایا ہے کہ٬ شراب اس لئے حرام ہے چونکہ مسکر ہے پس اس سے بحوبی معلوم ہو تا ہے کہ ہر وہ چیز جو نشہ آور اور عقل کو زائل کر دے وہ حرام ہےـ
لیکن اگر علت حکم بیان نہ ہوئی ہو یا اگر بیان کی گئی ہو مگر علت تامہ نہ ہو تو ایسی صورت میں ہم لوگ شارع مقدس کے دستورات کے تابع محض ہیں ـ نماز مسافر کے قصر ہونے کی علت جو بیان کی گئی ہے وہ یقین آور نہیں ہے کہ علت تامہ ہو لہذا اس علت کو نماز مسافر کے قصر ہو نے پر دلیل محکم نہیں جانا جا سکتا ہے البتہ ہر نماز قصر نہیں ہے بلکہ چار رکعتی نماز مسافر پر قصر ہے 2 لیکن اگر کوئی سفر معصیت پر جا رہا ہے تو اسکی نماز پوری ہے 3 اور مسافر مسجد الحرام (خانہ کعبہ)٬ مسجد نبوی٬ مسجد کوفہ٬ اور امام حسین علیہ السلام کے قبہ کے نیچے نماز پوری پڑھ سکتا ہےـ

منبع: گروہ ترجمہ سایٹ صادقین


1. علل الشرائع، ص ۳۲۲ - رموز نماز، ص ۲۵۱
2. جوابات، ج ۱، ص ۱۸۷
3. جوابات، ج ۱، ص ۲۰۲






تنقيد

نام :
ايميل :
مقابل کي دو گنتي کو خط ميں جوڑ کر لکھيں
6+8 =